اگر کسی نے گلگت بلتستان کی حیثیت کو چھیڑا تو وہ نریندر مودی کے برابرتصور کیا جائیگا۔ سردار عتیق

0
32
Sardar Attique Adressing to MC Convention

مجھے یقین ہے وزیراعظم عمران خان نوازشریف اورآصف زرداری کے نہیں بلکہ قائد اعظم کے نقشے قدم پر چلیں گے۔ سردارعتیق احمد خان

حکومت پاکستان آزادکشمیر کی داخلی خودمختاری میں اضافہ، گلگت بلتستان کی حیثیت کو چھیڑے بغیراس کے مسائل حل کرے۔ دھیرکوٹ میں کنونشن سے خطاب

مظفرآباد (کے این این) آزادکشمیر اورگلگت بلتستان کا علاقہ پاکستان کا دفاعی حصار اورمقبوضہ کشمیر کا بیس کیمپ ہے لھذا اس خطے کی حیثیت کوچھیڑے بغیراس میں تعمیر وترقی اور اس کے مسائل حل کیئے جائیں۔ ان خیالات کا اظہارسابق وزیراعظم و قائد مسلم کانفرنس سردار عتیق احمد خان نے دھیرکوٹ میں کشمیر بنیگا پاکستان کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

اپنے خطاب میں ان کا کہنا تھا کہ کہ آج کا کنونشن اسکیمیں دینے اور پیسے بانٹنے کیلئے نہیں بلکہ ایک نظریاتی و فکری بات کرنے کیلئے، مقبوضہ کشمیر کے لوگوں کیساتھ اظہاریکجہتی کیلئے، مسلح افواج سےہمقدم ہونے کیلئے اور پاکستان کے خلاف ہونے والی تحزیب کاری کو روکنے کیلئے منعقد کیا جارہا ہے۔ گلگت بلتستان اور آزادکشمیر کے تشخص سے متعلق بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہندوستان کی ہمیشہ سے یہی کوشش رہی ہے کہ پاکستان کشمیر کی حیثیت کوچھِیڑے تاکہ ہمارا کیس کمزور ہو۔ اسی ضمن میں پہلے پیپلزپارٹی کے دور حکومت میں گلگت اورآزادکشمیر کو صوبہ بنانے کی کوشش کی گئی، دوسرا حملہ بھی آصف علی زرداری نے کیا اور گلگت بلتستان کو صوبہ بنانے کی کوشش کی مگر ہم نے کہا کہ یہ تقسیم کشمیر کے اندر ہے اوراس سے ہندوستان کو موقع مل جائے گا پھر ن لیگ دور میں بھی اسے صوبہ بنانے کی کوشش کی گئی۔

مکمل تقریراس ویڈیو لنک میں دیکھئے

میثاق جمہوریت سے متعلق بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میثاق جمہوریت سے جہاں اٹھارویں ترمیم کر ذریعے پاکستان کو چار حصوں میں تقسیم کرنے کی کوشش کی، جہاں افواج پاکستان کے خلاف ففتھ جنریشن وار کا راستہ ہموار کیا، جہاں مذہبی و سیاسی، قومی و لسانی فسادات کو تقویت دی، جہاں پاکستان میں دھشت گردی کو فروغ دیا وہیں آزادکشمیر میں نظریہ الحاق پاکستان والی سوچ مسلم کانفرنس کو جو کہ غیرمشروط طور پر پاکستان سے وابستہ تھی کمزور کردیاگیا لیکن گلگت بلتستان کوصوبہ نہیں بناسکے۔

وزیراعظم عمران خان کے نام اپنے پیغام میں انکا کہنا تھا کہ عمران خان کو ذولفقارعلی بھٹو، آصف زرداری، نوازشریف یا قائداعظم میں سے کسی ایک شخصیت کاانتخاب کرتے ہوئے اسکے راستے پرچلنا ہوگا۔ سردارعتیق احمد خان نے کہا کہ اںہیں یقین ہے کہ عمران خان قائد اعظم کے راستے پرچلیں گے۔

قائد مسلم کانفرنس نے کہا کہ اگرہندوستان اورپاکستان کی جنگ ہوگئی تو کشمیر کے پہاڑہندوستانی افواج کا قبرستان ثابت ہونگے۔ مسلم کانفرنس کامیابی کے راستے پرگامزن ہوچکی ہےاور بہت جلد مجاہداول والی مسلم کانفرنس دوبارہ بحال ہوگی، ہم نے غیرمشروط طور پر کشمیر بنے گا پاکستان کا نعرہ لگایا اورآج بھی اس پر پہرہ دے رہے ہیں۔ ملکی سالمیت کیلئے مضبوط معیشت نہیں بلکہ جانداردفاع لازم ہے کیونکہ مضبوط دفاع بنیاد اورمعیشت وجمہوریت ایک ڈیکوریشن کی طرح ہیں اورہمیں پاکستان کے دفاع کومضبوط سے مضبوط دیکھنا ہے۔

اس سے قبل چیئرمین مسلم کانفرنس یوتھ ونگ سردارعثمان علی خان نے بھی اپنی جذباتی تقریر میں حکومت پاکستان پرزور دیا کہ گلگت بلتستان کی آئینی حیثیت کو نا چھیڑا جائے اگر یہ پاکستان کے مفاد میں ہے تو6 لاکھ کشمیریوں نے بھی اسی مقصد کیخاطرقربانیاں دی ہیں اور اگر ایسا کیا گیا تویہ ہندوستان کوبیل آئوٹ دینے کے مترادف ہوگا۔ انہوں نے اعلان کیا کہ مسلم کانفرنس آزادکشمیر بھرمیں کشمیر بنے گا پاکستان کنونشنز کا اہتمام کرے گی۔

یادرہے، مسلم کانفرنس نے اس سے قبل لائن آف کنٹرول کے قریب نیلم ویلی میں بھی کشمیر بنے گا پاکستان کنونشن کا انعقاد کیا تھا۔ کنونشن سے پاکستان ایکس سروس مین سوسائٹی کے سیکرٹری جنرل کرنل (ر) نسیم راجہ اورجنرل (ر) اسلم طاہر اورصدرمسلم کانفرنس مرزاشفیق جرال سمیت دیگر قائدین نے بھی خطاب کیا۔ مسلم کانفرنس اپنا اگلا پڑائو15 اکتوبر کوباغ میں ڈالے گی جس کے بعد راولاکوٹ اورمظفرآباد میں بھی کنونشنز کاانعقاد کیا جائیگا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.